IQNA

9:15 - May 08, 2016
خبر کا کوڈ: 3500743
بین الاقوامی گروپ: مجلس وحدت مسلمین نے شیعہ جوان خرم زکی کے قتل کو آپریشن ضرب عضب پر سوالیہ نشان قرار دے دیا

ایکنا نیوز- مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے دہشت گردی کے واقعہ میں سول سوسائٹی کےامن پسند رہنما اور ممتاز صحافی خرم ذکی کے قتل پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے اسے کالعدم مذہبی جماعتوں کی کاروائی قرار دیا ہے. انہوں نے کہا کہ سول سوسائٹی کے امن پسند رہنماشہید خرم ذکی کا قتل نیشنل ایکشن پلان پر سوالیہ نشان ہے ،خرم ذکی کو ملک دشمن تکفیری گروہ کے خلاف آواز بلند کرنے کی سزادی گئی ہے.خرم ذکی ایک نڈر اور سچائی پسند محب وطن تھا۔

انہوں نےکہا کہ دہشت گردی کے بڑھتے ہوئےواقعات قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے. حکومت امن وامان کے قیام اور عوام کو تحفظ کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے.اس سے قبل گزشتہ ماہ کراچی میں جمعہ نماز کی ادائیگی کے بعد گھر جانے والے جامعہ کراچی کے گولڈ میڈلسٹ ہاشم رضوی کو بھی سفاک دہشتگردوں کی جانب سے ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بنایا گیا تھا جس کے قاتل تاحال نہیں پکڑے گئے. علامہ ناصر عباس جعفری نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ خرم ذکی کے قاتلوں کو فی الفور گرفتار کر کے قرار واقعی سزا دی جائے. انہوں نے صحافی برادری اور سول سوسائٹی کے اراکین سے بھی مطالبہ کیا کہ وہ اس مظلومانہ شہادت کے مرتکب دہشت گردوں کے خلاف ہر پلیٹ فارم پر آواز بلند کریں۔

قابل ذکر ہے کہ خرم زکی داعش حامی تکفیری گروپوں اور تنظیموں کے خلاف آواز اٹھانے میں پیش پیش تھے اور امکانی طور پر انہیں عناصر نے انہیں شہید کردیا ہے.

نام:
ایمیل:
* رایے: